ناقابل یقین انکشاف

لاہور(ویب ڈیسک) موٹروے پر خاتون کے ساتھ ہونیوالے افسوسناک واقعہ کے ملزمان کی تلاش کے دوران انکشاف ہوا کہ کرول گاؤں اور ملحقہ دیہات سے 25 ریکارڈ یافتہ ملزمان غائب ہیں۔پولیس کے مطابق ایسٹرن بائی پاس کے قریب جہاں خاتون کے ساتھ غلط حرکت کی گئی وہاں 5 کلومیٹر کے علاقے میں سرچ اینڈ سویپ

کا کام جاری ہے اور اس دوران انکشاف ہوا کہ 25 ریکارڈ یافتہ ملزمان اپنے گھروں میں نہیں، ان کی تلاش جاری ہے۔دوسری جانب پولیس نے 3 دیہات کے 53 افراد کے میڈیکل نمونے لے لیے ہیں، تمام افراد کی عمریں 20 سے 35 سال کے درمیان ہیں۔ایف آئی آر کے مطابق گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والی خاتون رات کو تقریباً ڈیڑھ بجے اپنی کار میں اپنے دو بچوں کے ہمراہ لاہور سے گوجرانوالہ واپس جا رہی تھی کہ رنگ روڈ پر گجر پورہ کے نزدیک اسکی کار کا پیٹرول ختم ہو گیا۔کار کا پٹرول ختم ہونے کے باعث موٹروے پر گاڑی روک کر خاتون شوہر کا انتظار کر رہی تھی، پہلے خاتون نے اپنے ایک رشتے دار کو فون کیا، رشتے دار نے موٹر وے پولیس کو فون کرنے کا کہا۔جب گاڑی بند تھی تو خاتون نے موٹروے پولیس کو بھی فون کیا مگر موٹر وے پولیس نے مبینہ طور پر کہا کہ کوئی ایمرجنسی ڈیوٹی پر نہیں ہے۔ذرائع کے مطابق موٹروے ہیلپ لائن پر خاتون کو جواب ملا کہ گجر پورہ کی بِیٹ ابھی کسی کو الاٹ نہیں ہوئی۔ایف آئی آر کے مطابق اتنی دیر میں دو افراد موٹر وے سے ملحقہ جنگل سے آئے اور کار کا شیشہ توڑ کر زبردستی خاتون اور اس کے بچوں کو نزدیک جنگل میں لے گئے جہاں ڈاکوؤں نے خاتون کے بچوں کے سامنے غلط حرکت کی گئی اور اس سے طلائی زیور اور نقدی چھین کر فرار ہو گئے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.