بھارتی خفیہ ایجنسی را کی سرپرستی میں چلنے والا نیٹ ورک بے نقاب، بھارتی فنڈنگ کے شواہد بھی مل گئے

کراچی(این این آئی)بھارتی خفیہ ایجنسی را کی سرپرستی میں چلنے والا نیٹ ورک بے نقاب ہو گیا، ایس ار اے کے 15 سے زائد دہشتگردوں کی سندھ اور بلوچستان میں موجودگی کا انکشاف ہوا ہے۔تفصیلات کے مطابق بھارت اپنی حرکتوں سے باز نہ آیا، اندرون سندھ سمیت بلوچستان کے مختلف علاقوں میں دہشتگردوں کے روپوش ہونے کا

انکشاف ہوا ہے۔ پولیس کے مطابق دہشتگرد اندرون سندھ کے بارڈرعلاقوں میں منظم ہونے کی کوشش میں مصروف ہیں۔ ایس ار اے کو بھارتی فنڈنگ کے شواہد تفتیش کاروں کو مل گئے۔پولیس حکام کے مطابق بیرون ملک سے اصغر نامی شخص فنڈنگ کررہا ہے، دہشتگردوں کے نیٹ ورک کے 4 سیزائد کارندے پولیس حساس اداروں کے ساتھ مل کر گرفتار کر چکی ہے، نیٹ ورک کے مزید کارندوں کی تلاش کے لیے پولیس اور حساس ادارے سندھ اور بلوچستان میں چھاپہ مار کارروائیاں کررہے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق بھارت نے افغانستان میں امن عمل کو سبوتاژکرنے اور خطے میں عدم استحکام کے لیے اپنے گریٹ ڈبل گیم منصوبے پر عمل شروع کردیا، اس منصوبے کے تحت داعش کو ساتھ ملا کر ایک طرف جہاں افغانستان میں بدامنی پھیلائی جائیگی وہیں پاکستان کو ناکام ریاست ثابت کرنے کیلیے بھی کارروائیاں کی جائیں گی۔ مقبوضہ کشمیر میں دہشتگرد گروپوں کو کھڑا کرکے وہاں کی جانے والی کارروائیوں کا الزام بھی پاکستان پر لگایا جائے گا۔ایک رپورٹ کے مطابق بھارت نے نکسل موومنٹ کے خلاف بھی داعش کی پشت پناہی کی کوشش کی ہے۔بھارت ان دہشت گرد گروپوں کو ہمسایہ ممالک بالخصوص پاکستان کے خلاف استعمال کر رہا ہے۔بھارت کی خطے میں جاری گریٹ ڈبل گیم جو بڑے عرصے سے جاری تھی

اب بے نقاب ہوچکی ہے۔رپورٹ کے مطابق یہ گریٹ ڈبل گیم 2019 میں شروع ہوئی۔ابتدائی نتائج 2020 میں آنے کا ہدف رکھا گیا تھا مگر کورونا کی وجہ سے اس میں تعطل آیا۔2021 کے آغاز کے ساتھ ہی نریندر مودی نے اس گریٹ ڈبل گیم پر دوبارہ عمل شروع کر دیا ہے۔اس سے قبل اقوام متحدہ جنوبی ریاستوں کیرالہ اور کرناٹک میں

دہشت گرد گروپوں کی نشاندہی کر چکی ہے۔کنگز کالج لندن میں ڈیفنس سٹڈیز کے استاد اوی ناش پلوال کی کتاب میں اس گریٹ ڈبل گیم کو بے نقاب کیا گیا ہے۔اس رپورٹ کے مطابق بھارت چانکیہ کی پالیسی اپنائے ہوئے ہے۔کابل میں سِکھوں کے گوردوارے پر حملہ کرایا گیا جس کا ماسٹر مائینڈ ایک بھارتی شہری نکلا۔ بھارت افغانستان کے امن کو

ہر قیمت پر تباہ کرنا چاہتا ہے۔ پاکستان بار ہا کہہ چکا ہے کہ افغانستان اور پاکستان کا امن ایک دوسرے سے جڑا ہے۔بھارت پاکستان کی مغربی سرحد سے بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں عدم استحکام پیدا کرنے کی کوششیں کر رہا ہے۔اس کیلئے پاکستان میں فرقہ وارانہ فسادات کرائے جائیں گے،کراچی اور مچھ کے حالیہ واقعات اسی سلسلے

کی کڑی ہیں۔اوی ناش پلوال کی کتاب جو2017 میں شائع ہوئی تھی سے معلوم ہوتا ہے کہ مودی حکومت نے افغان طالبان کو بھی اپنے جال میں پھانسنے کی بہت کوشش کی۔اس کتاب میں بلوچ اینڈ پشتون کارڈکا پورا باب لکھا گیا ہے۔بلوچ اینڈ پشتون کارڈ بھارت کی گریٹ گیم کا اہم حصہ ہے۔

وفاقی حکومت نے ایف نائن اسلام آباد کا پارک گروی رکھنے کا فیصلہ کر لیا

اسلام آ باد ( ویب ڈیسک ) وفاقی حکومت نے قرضہ حاصل کرنے کیلئے ایف نائن پارک کی اراضی بطور ضمانت گرو ی رکھ کر ڈومیسٹک اور انٹر نیشنل اجارہ سکوک ( بانڈ ) جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس کی منظوری وزیر اعظم کی زیر صدارت منگل کو ہونے والے وفاقی کا بینہ کے

اجلاس میں دی جا ئے گی۔ ایف نائن پارک پورے سیکٹر پر پھیلا ہو ا ہے ۔ ایک سیکٹر کا سائز 706 ایکڑ ہوتا ہے۔ وزارت خزانہ نے سمری کابینہ ڈویژن کو بھیج دی ۔ما ہرین کا کہنا ہے کہ کسی بھی اراضی کو گروی رکھنے سے قبل اس کی ویلیو ایشن کی جا تی ہے اور اس کی آ مدن کو دیکھا جا تا ہے جیسا کہ موٹروے یا ایئر پورٹ وغیرہ۔ ایف نائن پارک کا تو ٹکٹ تک نہیں ہے۔ اس میں داخلہ مفت ہے۔ یہ پبلک پارک ہے جس سے نہ آ مدن ہے اور نہ ہی اسے فروخت کیا جا سکتا ہے۔ اس وجہ سے سر مایہ کار شاید اس میں سر مایہ کاری سے گریز کریں ۔ اگر ایف نائن پارک کے سامنے بلیو ایریا کی کمرشل سٹرپ ( دو کلومیٹر ) کی پٹی کو گروی رکھا جا تا تو اس کے بہتر نتائج نکل سکتے تھے یا جناح کنونشن سنٹر کو گروی رکھا جا سکتا ہے جس کاایریا 11 ایکڑ ہے اور وہاں سے آمدن بھی ہوتی ہے۔تاہم سی ڈی اے کے ذ رائع نے بتایا کہ وزارت خزانہ نے اس بارے میں یہ واضح طور پر یقین د ہانی کرائی ہے کہ سکوک کے اجراء سے ایف نائن پارک کی اراضی کے استعمال کی نوعیت تبدیل نہیں ہوگی ۔ دوسرے یہ کہ اس اراضی کی ملکیت بھی تبدیل نہیں ہوگی بلکہ اس ضمانت کی نوعیت علامتی ہے،منگل کو ہونے والے اجلاس میں ملک کی سیا سی صورتحال کے علاوہ 17 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا جا ئے گا۔

بریکنگ نیوز: بھارت سعودی عرب سے ناراض ، وجہ کیا بنی ؟ تازہ ترین خبر

نئی دہلی(ویب ڈیسک) ایک طرف کرونا کی وبا کے بعد انڈیا کی معیشت بحالی کی جانب گامزن ہے تو وہیں ملک میں پٹرول، ڈیزل اور دیگر توانائی کے ذرائع کی مانگ میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔مگر اب جب کہ سعودی عرب کی قیادت میں تیل پیدا کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک نے اعلان کیا ہے

کہ وہ تیل کی پیداوار میں کمی کرنے والے ہیں جو اس بحالی میں رخنہ ڈال سکتی ہے۔معاشی ترقی کیلئے انڈیاکو نہ صرف پٹرول اور ڈیزل کی بلا رکاوٹ ترسیل چاہیے بلکہ کم قیمت پر بھی درکار ہے کیونکہ انڈیا ایک ایسا ملک ہے جو اپنی تونائی کی ضروریات میں سے 80 فیصد درآمد کرتا ہے۔امریکہ اور چین کے بعد انڈیا دنیا میں خام تیل کا تیسرا بڑا صارف ہے۔اس ہفتے سعودی عرب نے اعلان کیا ہے کہ وہ خام تیل کی یومیہ پیداوار میں 10 لاکھ بیرل کمی کریگا اور دیگر اوپیک ممالک نے بھی یوپیہ پیداوار میں9 کروڑ 70 لاکھ بیرل کم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ انڈیا کیلئے یہ بری خبر ہے۔ انڈیا اس اعلان سے خوش نہیں ہے اور یہی بات ملک کے وزیرِ تیل و گیس دھرمندرا پردھان نے ایک پریس کانفرنس میں کی ہے۔بعد میں انہوں نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ’’میرا اصرار منصفانہ قیمتوں پر ہے جو صارفین اور تیل پیدا کرنے والوں دونوں کے مفاد میں ہے۔ پیداوار میں کمی عالمی معاشی بحالی کا شاید بہترین طریقہ نہیں ہے‘‘۔

روزانہ چائے کے کتنے کپ پینے سے فالج کا خطرہ کم ہو جاتا ہے؟طبی تحقیق میں اہم انکشاف

آسٹریلیا(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر تو آپ چائے یا کافی پینا پسند کرتے ہیں تو اچھی بات یہ ہے کہ یہ عادت دل کی دھڑکن کی بے ترتیبی اور فالج کا خطرہ کم کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔ یہ بات آسٹریلیا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ میلبورن کے الفریڈ ہاسپٹل کی تحقیق میں بتایا گیا کہ چائے یا کافی میں موجود کیفین مرکزی اعصابی نظام کو حرکت میں لاکر ایڈی نوسین نامی کیمیکل کے اثرات کو بلاک کرتا ہے

جو کہ atrial fibrillation یا اطاقی فائبرلیشن کا باعث بنتا ہے۔ چائے پینے کا یہ فائدہ جانتے ہیں؟ اطاقی فائبرلیشن دل کی دھڑکن کا سب سے عام مرض ہے جس میں دل بہت تیزی سے دھڑکتا ہے اور علاج نہ کرایا جائے تو فالج بھی ہوسکتا ہے۔ تحقیق کے مطابق عام طور پر سمجھا جاتا ہے کہ کیفین سے دل کی دھڑکن کے مسائل پیدا ہوتے ہیں ، تاہم کافی اور چائے وغیرہ اس سے بچاﺅ میں مددگار ثابت ہوسکتے ہیں جس کی وجہ ان میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹس اور ایڈی نوسین کو بلاک کرنے کی خصوصیت ہے۔ اس حوالے سے روزانہ 3 کپ ان مشروبات کا استعمال فائدہ مند ہوتا ہے۔ اس تحقیق کے دوران 2 لاکھ سے زائد افراد کے ڈیٹا کا جائزہ لیا گیا تو معلوم ہوا کہ کیفین والے مشروبات کے استعمال سے دل کی دھڑکن کے مسائل کا خطرہ 13 فیصد تک کم کیا جاسکتا ہے۔ اس تحقیق کے دوران ایسے 103 افراد کا جائزہ بھی لیا گیا جو ہارٹ اٹیک کا شکار ہوچکے تھے اور انہیں روزانہ 353 ملی گرام کیفین استعمال کرایا گیا تو دل کی دھڑکن میں بہتری آئی۔ چائے پینا جان لیوا مرض سے بچائے تاہم تحقیق کے دوران یہ بات بھی سامنے آئی کہ چائے یا کافی کا بہت زیادہ استعمال ایسے عارضے کا خطرہ بڑھاتا ہے جس میں دل کے نچلے چیمبرز میں دھڑکن بہت تیز ہوجاتی ہے۔ اس تحقیق کے نتائج جریدے جرنل جے اے سی سی: کلینکل Electrophysiology میں شائع ہوئے۔

کن کن علاقوں میں بارش ہونیوالی ہے محکمہ موسمیات نے پیشگی بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم سرد اور خشک جبکہ بالائی علاقوں اور شمالی بلوچستان میں شدید سرد رہے گا۔ پنجاب کے میدانی علاقوں اور بالائی سندھ میں دھند چھائے رہنے کا امکان ہے۔ رپورٹ کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بالائی خیبر پختونخوا، کشمیر، گلگت بلتستان، شمال مشرقی پنجاب، خطۂ پوٹھوہار کے بعض علاقوں میں کہیں

کہیں ہلکی بارش ہوئی۔پنجاب کے وسطی اور جنوبی میدانی علاقوں میں دھند چھائی رہی۔ ملک کے دیگر علاقوں میں موسم سرد اور خشک رہا ہے،دوسری جانب شدید دھند کے باعث موٹروے ایم تھری کو لاہور سے عبد الحکیم اور سمندری تک عارضی طور پر بند کر دی گئی ہے۔پنجاب کے مختلف شہروں میں دھند کا سلسہ جاری ہے جس کے باعث موٹر وے کو مختلف مقامات پر ٹریفک کے لیے بند کر دی گئی ہے۔ترجمان موٹر وے پولیس کے مطابق شدید دھند کے باعث لاہور سیالکوٹ اور خانیوال سے ملتان موٹروے بھی بند کر دی ۔ قومی شاہراہ پر مانگا منڈی، دینہ ناتھ، پھول نگر، جمبر، پتوکی اور حبیب آ باد میں بھی دھند چھائی ہوئی ہے، ان علاقوں میں حد نگاہ 100میٹررہ گئی ہے۔ترجمان موٹروے کا کہنا ہے کہ ڈرائیور گاڑیوں پر فوگ لائٹس کا استعمال کر یں اور اگلی گاڑی سے مناسب فاصلہ رکھیں۔ ترجمان موٹروے نے ڈرائیور حضرات کو ہدایت کی ہے کہ دھند کے دوران شہری غیر ضر وری سفر سے گریز کریں اور دوران سفر فوگ لائٹس کا استعمال کریں گاڑیوں کے درمیان فاصلہ رکھیں اور مشکل صورت حال میں مزید معلومات کے لئے موٹر وے کی ہیلپ لائن 130 اور پٹرولنگ پولیس کی ہیلپ لائن 1134پر رابطہ کریں۔

سرکاری سکولوں میں نیا تعلیمی سال کس مہینے سے شروع ہوگا؟سالانہ امتحانات سے متعلق بھی بڑا اعلان کردیا گیا

مکوآنہ (نیوز ڈیسک )سرکاری سکولوں میں نیا تعلیمی سال 15 مئی سے شروع کرنے کا فیصلہ،کورونا پیٹرن کے تحت اس سال امتحانی پرچے آسان،مارکنگ نارمل طریقہ سے کی جائے گی. پنجاب سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے فیصلوں کے مطابق پنجاب بھر کے تمام سرکاری سکولوں میں نیا تعلیمی سال 15 مئی سے شروع ہوگا جبکہ کچی کلاس سے ہفتم کلاس تک کے سالانہ امتحانات اپریل کے آخری ہفتہ سے لیکر مئی کے

پہلے عشرہ تک ہونگے، سالانہ امتحانات کا نیا خصوصی کورونا پیٹرن بھی جاری کردیا گیا ہے جس کے تحت 50 فیصد نمبر ہوم ورک کے رکھے گئے ہیں یہہوم ورک طلباء کو آن لائن یا پھر سکول بلاکر دیا جائے گا جبکہ50فیصد نمبر امتحانی پرچوں کے ہونگے،سالانہ پرچے نارمل انداز میں لئے جائیں گے جبکہ امسال کورونا کے باعث پرچے زیادہ سخت نہیں ہونگے،مارکنگ بھی نارمل ہوگی،موسم گرما کی تعطیلات اس سال 10 یا 15 جون سے شروع ہونگی اور 15 اگست سے تمام سکول دوبارہ کھل جائیں گے،دوسری جانب محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کی سنگین غفلت سے فیکلٹی پوری نہ ہونے پر سرکاری میڈیکل اور ڈینٹل کالجز میں ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کی 283 سیٹیں کم کر دی گئیں، سینکڑوں طلبا کا ڈاکٹر بننے کاخواب چکنا چور ہوگیا’ پنجاب کے سرکاری کالجز میں ایم بی بی ایس کی 3405 سیٹیں کم ہو کر 3138، بی ڈی ایس کی سیٹیں 216 سے کم ہو کر 200 رہ گئیں، پنجاب میں سرکاری میڈیکل کالجز میں داخلے کے خواہاں سینکڑوں طلبا کا مستقبل تاریک ہوگیا، ایم بی بی ایس کی 267 اور بی ڈی ایس کی 16 سیٹیں کم کی گئی ہیں، کم ہونے والی سیٹوں میں سب سے زیادہ شیخ خلیفہ بن زید میڈیکل کالج کی 62 سیٹیں شامل ہیں، شیخ خلیفہ بن زید میڈیکل کالج وفاق کے زیر انتظام ہونے پر سیٹیں دوسرے صوبوں کو دیدی گئی۔ نشتر اور پنجاب میڈیکل کالج کی ایم بی بی ایس کی 75، 75 سیٹیں، قائد اعظم میڈیکل کالج کی 25 سیٹیں کم کی گئی ہیں، نشتر ، پنجاب اور قائداعظم میڈیکل کالجز میں سیٹیں فیکلٹی کی شدید کمی کے باعث کم کی گئی ہیں، راولپنڈی میڈیکل کالج میں ایم بی بی ایس کی 20 سیٹیں بڑھا دی گئیں، نشتر انسٹی ٹیوٹ آف ڈینٹسٹری میں بی ڈی ایس کی 16 سیٹیں کم کی گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کی جانب سے بروقت فیکلٹی کی کمی دور نہ کرنے سے ایم بی بی ایس اور بی ڈی ایس کی سیٹیں کم ہوئیں، پاکستان میڈیکل کمیشن کی بار بار وارننگ کے باوجود سرکاری میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز میں فیکلٹی کی شدید کمی کو دور نہیں کیا جاسکا۔

کون کون سے نوٹ 2مہینے بعد بندہونے والےہیں؟عوام کے لیے بڑی خبرآگئی

نئی دہلی(ویب ڈیسک )100، 10 اور پانچ روپے کے پرانے نوٹ کو لے کر بڑی خبر سامنے آرہی ہے ۔ ریزرو بینک آف انڈیا نے جانکاری دی ہے کہ جلد ہی یہ نوٹ چلن سے باہر ہوسکتے ہیں ۔ مارچ کے بعد آر بی آئی سبھی پرانے نوٹوں کو چلن سے باہر کرسکتی ہے ۔ حالانکہ اس سلسلہ میں آربی آئی کی جانب سے آفیشیل طور پر کچھ بھی نہیں کہا گیا ہے ۔ ریزرو بینک آف انڈیا کے اسسٹنٹ جنرلمینیجر بی مہیش نے کہا کہ آر بی

آئی ان پرانے نوٹوں کی سیریز کو واپس لینے کے منصوبہ پر کام کررہی ہے ۔منی کنٹرول کی ایک خبر کے مطابق بی مہیش نے یہ بات ڈسٹرکٹ لیول سیکورٹی کمیٹی کی میٹنگ میں کہی ہے ۔ دراصل 100 روپے ، 10 روپے اور پانچ روپے کے پرانے نوٹ کے بدلے نئے نوٹ پہلے سے ہی سرکولیشن میں آچکے ہیں ۔ ایسے میں اگر پرانے نوٹوں کو بند بھی کیا جائے گا تو لوگوں کو کوئی پریشانی نہیں ہوگی ۔آپ کو بتادیں کہ ریزرو بینک آف انڈیا نے کہا کہ لوگوں کو نوٹ بندی کے وقت کافی پریشانی ہوئی تھی تو اس مرتبہ آر بی آئی یہ یقینی بنائے گا کہ جتنے پرانے نوٹ سرکولیشن میں ہیں ، اتنے ہی نئے نوٹ مارکیٹ میں آجائیں ، جس سے لوگوں کو کوئی پریشانی نہ ہو اور اس سیریز کو اچانک بند نہیں کیا جائے گا ۔ریزرو بینک آف انڈیا نے سال 2019 میں جب 100 روپے کے نوٹ جاری کئے تھے ، تبھی واضح کردیا تھا کہ پہلے جاری کئے گئے سبھی 100 روپے کے نوٹ بھی قانون طور پر چلتے رہیں گے ۔ اس کے علاوہ آر بی آئی نے 8 نومبر 2016 کو نوٹ بندی کے بعد 2000 روپے نوٹ کے علاوہ 200 روپے کے نوٹ جاری کئے تھے ۔آپ کو بتادیں کہ آر بی آئی وقتا فوقتا پرانے نوٹوں کو واپس لیتا رہتا ہے اور نئے نوٹ جاری کرتا رہتا ہے ۔ جعلی نوٹوں پر لگام لگانے کیلئے آر بی آئی کی جانب سے یہ قدم اٹھایا جاتا ہے ۔ آفیشیل اعلان کے بعد بند کئے گئے سبھی پرانے نوٹوں کو بینک میں جمع کرانا ہوتا ہے ۔

کہیں موبائل کیمرہ سے آپ کو کوئی دیکھ تو نہیں رہا؟ جانیں موبائل میں موجود 3 حیران کن فیچرز جس کے بارے میں آپ نہیں جانتے

موبائل فون آج کل ایک ایسی ٹیکنالوجی ہے جس کے ذریعے ہم ڈھیروں فوائد حاصل کر سکتے ہیں۔ ایک موبائل فون ہمارے لیے کیمرہ، نوٹ بک، فون ثابت ہوتا ہے۔ تاہم موبائل کے کچھ ایسے پوشیدہ راز بھی ہیں جو یقیناً آپ میں سے بہت سے لوگ نہیں جانتے ہوں گے۔

آج ہم آپ کو موبائل کے ان ہی فیچرز اور کچھ ایپس کے بارے میں بتانے جا رہے ہیں جن کا عمل بہت کم صارفین کو ہے۔

نئی ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ

جب بھی ہم کوئی نئی ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ کرتے ہیں تو وہ آپ کے فون کے ڈیٹا اور تصاویر وغیرہ پر ایکسس کے لیے اجازت طلب کرتی ہے اور آپ کو وہ دینی پڑتی ہے ورنہ آپ وہ ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ نہیں کر سکیں گے۔ تاہم ایکسس حاصل کرنے والے افراد کسی بھی وقت آپ کے فون پر کنٹرول حاصل کر سکتے ہیں۔ تاہم اگر کسی بھی ایپلیکیشن کے افراد ہمارا کوئی ڈیٹا حاصل کرنے لگیں تو ہمیں کیسے معلوم ہو؟ پلے اسٹور میں جا کر آپ ایکسس ڈاٹس نامی ایپلیکیشن کو ڈاؤن لوڈ کر لیں۔ یہ ایپ آپ کے جاسوس کی طرح کام کرے گی۔ جب بھی کوئی آپ کا فون ایکسس کرنے کی کوشش کرے گا تو موبائل کے اوپر ایک لال گول نشان بنا آجائے گا۔ اس سے آپ فوری طور پر یہ ایپ ان انسٹال کر سکتے ہیں جس سے وہ رسائی حاصل نہیں کر سکے گا۔

ائیر پلین موڈ

فون میں موجود ائیر پلین موڈ سے سب واقف ہیں۔ اور یہ بھی جانتے ہیں کہ اگر جہاز میں سفر کریں تو اسے آن کر لیا جاتا ہے لیکن اس کا ایک اور فائدہ بھی ہے۔ جب بھی آپ کسی ایسی جگہ ہوں جہاں موبائل کے سگنل نا آرہے ہوں یا ڈیٹا نا چلے تو آپ فوراً ائیر پلین موڈ آ کریں اس کے دو سے تین منٹ بعد آف کر دیں۔ سگنل فوری طور پر واپس آ جائیں گے۔

کیمرہ ایکسس

بہت سی ایپلیکیشن جہاں ڈیٹا کی معلومات مانگتی ہیں وہیں کیمرہ ایکسس کرنے کی بھی معلومات مانگتی ہیں۔ اس سے ہوتا یہ ہے کہ کوئی بھی آپ کے فون کے کیمرہ کے ذریعے آپ کی لوکیشن اور سرگرمیاں دیکھ سکتا ہے۔ اس کے لیے آپ کو سب سے پہلے کیمرہ لیس نامی ایپ ڈاؤن لوڈ کرنی ہے اور پھر اپنے تمام ایپس کے کیمرے بلاک کر دینے ہیں۔

انسانی صحت کا راز صرف تین آیات میں پوشیدہ

مصر کے ماہر غذائیات اور موٹاپے کے معالج ڈاکٹر عماد فہمی نے ایک ٹی وی انٹرویو میں بتایا کہ انسانی صحت کا راز صرف تین آیات میں پوشیدہ ہے۔ انہوں نے پہلی آیت بتائی کہ (الاعراف آیت 31) جس کا ترجمہ ہے، “کھاؤ پیو اور حد سے تجاوز نہ کرو“۔ اس آیت کی تشریح کرتے ہوئے ڈاکٹر عماد فہمی بتایا کہ ڈاکٹر اکثر نشاستہ اور چکنائی سے منع کرتے ہیں، حالانکہ یہ دونوں چیزیں انسانی صحت کے لیے بنیادی اہمیت رکھتی ہیں، انہوں نے کہا کہ اصل چیز جس سے منع کیا جانا چاہیے وہ حد سے تجاوز ہے۔ دوسری آیت بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ (الانبیاء آیت 30) جس کا ترجمہ ہے، اور پانی سے ہر زندہ چیز پیدا کی۔

ڈاکٹر عماد فہمی نے کہا کہ پیاس لگے یا نہ لگے پانی ضرور پیجئے، طبی معیار کے مطابق ہر شخص اپنے وزن کے ہر ایک کلو پر 30 ملی گرام پانی پیئے۔ مثلاً اگر کسی کا وزن 70 کلو ہے تو وہ 2100 ملی گرام یعنی 2 لیٹر اور 100 گرام تقریباً 8 گلاس پانی روزانہ پیئے، یہ جگر، گردوں اور دل کی اچھی کارکردگی کے لیے نہایت ضروری ہے۔

ڈاکٹر عماد فہمی نے تیسری آیت سورۃ النباء کی آیت 11 بتائی، جس کا ترجمہ یہ ہے کہ اور رات کو پردہ پوش اور دن کو معاش کا وقت بنایا۔ مصر کے ڈاکٹر عماد فہمی نے اس کی تشریح کرتے ہوئے کہا کہ رات کو جلدی سویا جائے اور صبح جلدی اٹھا جائے۔ یہ سب سے بہترین نسخہ ہے جو آپ کو نہ موٹا کرے گا اور نہ ہی بیمار کرے گا۔

شادی کے ایک سال بعد شوہر کی موت ہوگئی تھی اور پھر ۔۔۔ جانیئے ریکھا کی زندگی کی اصل کہانی جو آپ بھی نہیں جانتے ہوں گے

کوئی بھی پیشہ اختیار کرنا آسان نہیں ہے جیسے آج کے دور میں نوکری حاصل کرنا آسان نہ تھا ایسے ہی پہلے کے دور میں اداکار بننا آسان نہیں تھا، آج تو ٹک ٹاک جیسی سستی شہرت نے لوگوں کو اسٹار بنا کر رکھ دیا ہے اور جو لوگ اسٹار بن جائیں ان کی زندگی کے تمام چھوٹے بڑے معملات پر میڈیا کی نظریں جمی رہتی ہیں۔ ایسی ہی ایک مایہ ناز اداکارہ ریکھا ہیں جن کے بارے میں انیسویں دہائی سے لے کر آج تک ہر ایک بات مداح جاننا چاہتے ہیں۔

اداکارہ ریکھا کی زندگی کے کچھ راز:

٭ بھارتی اداکارہ ریکھا نے محض 3 سال کی عمر میں فلمی دنیا میں قدم رکھا تھا اور جب سے اب تک یہ 700 سے زائد فلموں اور چھوٹے سٹیج ڈراموں میں کام کر چکی ہیں۔

٭ ان کا اصل نام بھانو ریکھا گنیشم ہے، یہ اکتوبر 1954ء کو مدراس میں پیدا ہوئیں۔

٭ ریکھا کو اداکارہ بننے کا کوئی شوق نہ تھا بلکہ ان کی والدی بھی ایک اداکارہ رھیں اور انہوں نے زبردستی ریکھا کو اداکارہ بننے پر زور دیا تھا۔

٭ یہ ایئر ہوسٹس بننا چاہتی تھیں مگر معاشی حالات نے ان کو اداکارہ بنا دیا۔

٭ ریکھا کو جب ہندی فلم میں پہلی بار کاسٹ کرنے کے لئے ڈائریکٹر ملے تو انہوں نے سوال کیا کہ ہندی آتی جس پر ریکھا نے کہا نہیں، انہوں نے پوچھا کہ فلم میں کام کرنا ہے جس پر ریکھا نے دوبارہ نہیں کا جواب دیا مگر ان کی اداؤں کو دیکھ کر فلم میں کاسٹ کرلیا گیا۔

٭ ریکھا نے کبھی ڈانس نہیں سیکھا اور نہ ہندی۔۔ یہ دونوں چیزیں ان کو خود بخود آگئی تھیں اور 400 فلمیں کرنے کے بعد تو ریکھا اسکرپٹ بھی بار بار نہیں پڑھتی تھیں کیونکہ ان کو ڈائیلاگز کا اندازہ ہو جاتا ہے۔

٭ ریکھا کے والدین ساؤتھ انڈین اداکار تھے مگر دونوں کی کبھی شادی نہیں ہوئی تھی، اور ریکھا بھی اپنے والد کا تزکرہ زیادہ نہیں کرتی ہیں۔

٭ ریکھا کی شادیوں سے متعلق اکثر اسکینڈلز آتے رہے ہیں مگر ایک انٹرویو میں ریکھا نے بتایا کہ:

” میری پہلی شادی 1990 میں مکیش اگروال سے ہوئی تھی اور وہ ایک سال کے بعد ہی مر گئے تھے انہوں نے خودکشی کی تھی جس کے بعد لوگوں نے مجھے لعن تعن دی کہ میری وجہ سے انہوں نے ایسا کیا جب کہ اس بات میں کوئی صداقت نہیں تھی۔”

٭ زندگی کے ایک تلخ راز سے متعلق بتائے ہوئے اداکارہ کا کہنا تھا کہ:

” مجھے اداکار ونود مہرا کی ماں نے چپل سے مارنے کی کوشش کی تھی جبکہ میری کوئی غلطی نہیں تھی، ونود مہرا نے مجھ سے محبت کی پھر شادی کی خبریں اتنی عام ہوئیں کہ مجھے ان کی والدہ نے مارنا پیٹنا شروع کردیا تھا، ہمیشہ سے مجھے دھوکے ملتے آئے ہیں، میں نے زندگی کو چٹان کی طرح لڑ کر گزارا ہے۔”

٭ ان کی زندگی کا ایک اور خاص راز یہ بھی ہے کہ اداکارہ ریکھا کو امیتابھ بچن سے محبت تھی مگر امیتابھ نے ان کو قبول نہ کیا اور جیا بچن کے ساتھ ریکھا کی سالوں تک لڑائی تھی لیکن 5 سال قبل دونوں نے ایک دوسرے کو ایک ایوارڈ کی تقریب میں گلے سے لگا لیا تھا۔