7سینیٹرز نے جان بوجھ کر یوسف رضا گیلانی کے نام پر مہر لگائی! پی ڈی ایم کا خدشہ درست نکلا، ووٹ ضائع کرنے والے اراکین کی تفصیلات سامنے آگئیں

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) چیئرمین سینیٹ کے الیکشن میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ پر متشمل اپوزیشن اتحاد کے 7 سینیٹرز کی جانب سے جان بوجھ کر امیدوار کے نام پر مہر لگانے کا انکشاف ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کے جن 7 سینیٹرز کے ووٹ مسترد ہوئے ان پر پہلے سے شبہ تھا کہ ان 7 ارکان کو کہا گیا ہے کہ یوسف رضا گیلانی کے نام پر مہر لگائیں تاکہ اس سے یہ ثابت ہو کہ انہوں نے پی ڈی ایم کو ہی ووٹ ڈالا ہے ، اس مقصد کے لیے ساتوں سینیٹرز نے جان بو جھ کر خانے میں مہر لگانے کی بجائے یوسف رضا گیلانی کے نام پر مہر لگائی۔اسی حوالے سے سینئر صحافی و اینکر پرسن عمران خان نے دعویٰ کیا ہے کہ 7 بندوں کا نام چل رہا تھا کہ یہ لوگ دھوکہ دیں گے ، ان میں ن لیگ کے 4 لوگ، ایک بندہ حاصل بزنجو کی پارٹی کا ، ایک سینیٹر اے این پی کا جب کہ غفور حیدری کے بارے بھی کہا گیا کہ وہ دھوکہ دیں گے۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چئیرمین سینیٹ کے الیکشن میں اپوزیشن کے 7 ووٹ بائی ڈیزائن خراب کیے گئے ، چئیرمین سینیٹ الیکشن میں شکست کے بعد بلاول بھٹو کو یہ دیکھنا چاہئے کہ وہ کون ہے جس نے اپوزیشن کے 7 ووٹ خراب کی کیوں کہ اپوزیشن کے 7 ووٹ بائی ڈیزائن خراب کیے گئے یہ ممکن نہیں کہ حکومت کے تمام ووٹ قبول ہوئے جب کہ اپوزیشن کے ووٹ خراب نکلے ، یہ سارا معاملہ ٹیکنیکل ہے، یوسف رضا گیلانی کو ٹیکنیکل طریقے سے ہرایا گیا ہے۔

معمولی آپریشن کیلئے 20 ادویات کا ہزاروں روپے کا نسخہادویات کی فہرست مریضہ کو تھما دی گئی، لواحقین کا احتجاج

وزیرآباد(آن لائن)تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں انگلی کی “چنڈی” کے معمولی آپریشن کے لئے 20 ادویات کا نسخہ۔ادویات کی مالیت 7ہزار روپے ۔ادویات کی فہرست مریضہ کو تھما دی گئی۔مذکورہ نسخہ بڑے آپریشن کی ضرورت سے بھی زیادہ ہے۔مریضہ کے لواحقین کا احتجاج ۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ نے انکوائری کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق موضع ڈھونیکی کی رہائشی 25سالہ سکینہ بی بی دختر محمد بشیر ہاتھ کی انگلی میں ” چنڈی” کے معمولی آپریشن کے لئے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میںلائی گئی ۔سرجن ڈاکٹر نے مریضہ کو داخل کرلیا۔ او پی ڈی میںآپریشن تھیٹر اسسٹنٹ نے اگلے روز آپریشن کے

لئے 20ادویات کہ فہرست تھما دی اور بازار سے خریدنے ہدائت کی۔مریضہ کے عزیز نثار احمد نے ادویات بازار سے خریدکر او ٹی کے حوالے کر دیں جن کی مالیت 6800 روپے تھی۔انگلی کی “چنڈی”کے آپریشن کے ایک بلیڈ اور پٹی سمیت ایک دو ادویات کی ضرورت ہو تی ہے جو عام طور پر آپریشن تھیٹر میں پہلے ہی موجود ہو تی ہیں۔آپریشن تھیڑ کے اسسٹنٹ نے جو ادویات منگوائیں وہ کسی بھی بڑے آپریشن کی ضرورت سے زائد ہیں۔ادویات کی فہرست میں غیر ضروری ادویات بھی شامل تھی جن میںبے ہوشی کے انجکشن، ٹانکے لگانے کے لئے مختلف قسم دھاگے وغیرہ شامل تھے۔ مریضہ کے لواحقین نے آپریشن تھیٹر کے عملہ کی غیر ذمہ داری پر شدید احتجا ج کیا اور ایک تحریری درخواست معہ ادویات کا نسخہ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ کو دے دی ۔ایم ایس نے درخواست کے ادویات کی طویل فہرست دیکھ کر حیرانی کا اظہار کیا اور ابتدائی معلومات کے بعد مکمل انکوائری کا حکم دے دیا ۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر عمر راٹھور نے کہا کہ جو ذمہ دار ہوگا اس کے خلاف قانون کے مطابق کار روائی کے جائے گی۔

لاہور کے گنجان آبادی کے علاقے میں واقع بند گھر کوسیڑھی لگا کر کھولا گیا تو اندر سے کیا نکل آیااہلیان علاقہ کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) لاہور کے گنجان آباد علاقے وحدت کاکالونی کے ایک گھر سے ایک بچی ملی ہے ۔جس کے بارے میں انکشاف ہواہے کہ اسے ڈیڑھ سال سے زبردستی قید میں رکھی گئی گھریلو ملازمہ ہے ، چائلڈ پروٹیکشن بیورو نے بچی کو اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔پولیس نے بتایا کہ بچی کابیان لےکرقانونی کارروائی شروع کر دی، بچی کہتی ہےکہ وہ ڈیڑھ سال سے ملک طارق کے گھرمیں ملازمہ ہے، اس سے پہلےاس کی چھوٹی

بہن یہاں ملازمہ تھی۔چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو سارہ احمد کہتی ہیں کہ بچی قصور کی رہائشی ہے جس کےوالدین سے رابطہ کیا جائے گا، بچی کو انصاف کی فراہمی ممکن بنائیں گے۔صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹن کا کہنا ہے کہ نا بالغ بچی سےزبردستی کام کرانا اور پھر تشددکا نشانہ بنانا بلا شبہ سنگین جرم ہے،گھریلو ملازمین کی حفاظت کیلئے قوانین پہلے سے موجود ہیں۔

دنیا کی ایک امیر ترین شخصیت نے اپنی دولت کا بیشتر حصہ عطیہ

نیویارک(ویب ڈیسک)ویڈیو میٹنگ پلیٹ فارم سے متعلق مشہور کمپنی زوم کے بانی ایرک یوان نے اپنا دولت کا ایک تہائی سے زیادہ حصہ عطیہ کر دیا ۔ کمپنی کے بیان میں کہاگیاکہ ایرک نے گذشتہ ہفتے 1.8 کروڑ شیئرز عطیہ کر دیے ۔ جمعے کے روز کاروبار بند ہوتے وقت کی قیمت کی بنیاد

پر ان شیئرز کی قیمت 6 ارب ڈالر بنتی ہے ۔واضح رہے کہ گذشتہ بر س زوم پلیٹ فارم کی مانگ میں اضافے کے سبب اس کے شیئر کی قیمت 400 فیصد کے قریب بڑھ گئی تھی اس کے نتیجے میں ایرک دنیا کے امیر ترین افراد کی فہرست میں شامل ہو گئے تھے ، ایرک 15.1 ارب ڈالر کی خالص دولت کے ساتھ فہرست میں 130 ویں پوزیشن پر آ گئے تھے ،ایران یوان چین میں پیدا ہوئے ۔ سیلی کون ویلی منتقل ہونے سے قبل امریکہ کا ویزا حاصل کرنے کے لیے ان کی درخواست 8 مرتبہ مسترد ہوئی۔ایرک ماضی میں وڈیو کانفرنسنگ کے خصوصی گروپ کے لیے کام کر چکے ہیں۔ انہوں نے 2011 میں زوم کمپنی قائم کی۔

پاکستان میں ٹک ٹاک ایپ بندکرنے کاحکم

اسلام آباد، بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک، این این آئی)پشاورہائیکورٹ نے ٹک ٹاک ایپ بندکرنے کاحکم دیدیا۔نجی ٹی وی کے مطابق پشاورہائیکورٹ میں ٹک ٹاک کیخلاف دائردرخواست پرسماعت ہوئی،ڈی جی پی ٹی اے،ڈپٹی اٹارنی جنرل اوروکلاعدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے ٹک ٹاک ایپ بند کرنیکا حکم دیدیا،عدالت نے آج سے ہی ٹک ٹاک ایپ بند کرنے کا حکم دیا،چیف جسٹسقیصر رشید خان نے کہاکہ ٹک ٹاک ویڈیو ز سے معاشرے میں فحاشی پھیل رہی ہے ،ٹک ٹاک پر اپ لوڈ ویڈیوز معاشرے کو قابل قبول نہیں ۔چیف جسٹس نے ڈی جی پی ٹی اے سے استفسار کیا کہ ٹک ٹاک ایپ بند کرنے

سے ان کو نقصان ہوگا؟،ڈی جی پی ٹی اے نے کہاکہ ٹک ٹاک عہدیداروں کو درخواست دی ہے مثبت جواب نہیں آیا،عدالت نے کہا جب تک عہدہ دار تعاون نہیں کرتے اس وقت ٹک ٹاک بند کیاجائے۔دوسری جانب ٹک ٹاک نے اپنے صارفین کو آن لائن بدزبانی اور ہراساں ہونے سے بچانے کے لیے 2 نئے فیچرز متعارف کرادیئے ۔میڈیارپورٹس کے مطابق ان میں سے ایک فیچر نامناسب کمنٹس پوسٹ کرنے سے روکنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے جبکہ دوسرا فیچر کمنٹس کو کنٹرول کرنے میں مدد دیتا ہے۔اس فیچر کے تحت جب کوئی صارف کسی پوسٹ پر نامناسب یا سخت کمنٹ کرنے لگے گا تو اس کے سامنے ایک پوپ اپ ونڈو کھل جائے گی اور کمنٹ کی زبان کے حوالے سے انتباہ کیا جائے گا۔ان کائنڈ نامی اس فیچر میں وارننگ اس وقت سامنے آئے گی جب سسٹم کو لگے کہ کمنٹ کمیونٹی گائیڈلائنز کی خلاف ورزی پر مبنی ہے۔اس پوپ اپ ونڈو میں لکھا ہوگا کہ کیا آپ اسے پوسٹ کرنے پر نظرثانی کرنا پسند کریں گے؟ جس کے ساتھ ایڈٹ یا پوسٹ اینی وے کے آپشنز ہوں گے۔اس طرح کا فیچر سوشل نیٹ ورکس کا حصہ بن چکا ہے تاکہ بدزبانی اور ہراساں کیے جانے کے واقعات کی روک تھام کی جاسکے۔انسٹاگرام میں اس طرح کا فیچر 2019 میں پیش کیا گیا تھا جبکہ ٹوئٹر نے گزشتہ سال اس کی آزمائش کا اعلان کیا تھا، فیس بک میں بھی ایسا کیا جارہا ہے۔انسٹاگرام نے فیچر کے نتائج کے حوالے سے بتایا تھا کہ اس سے لوگوں میں اپنے الفاظ پر نظرثانی کی حوصلہ افزائی ہوتی ہے۔دوسرا فیچر فلٹر آل کمنٹس کا ہے جس کے استعمال سے صارف کی فیڈ پر وہی کمنٹ نظر آئیں گے جن کی وہ منظوری دے گا۔اس فیچر کو کمنٹس فلٹرز مینیو میں جاکر ان ایبل کیا جاسکتا ہے اور ان ایبل ہونے کے بعد صارف کمنٹس کو پڑھ کر منظور یا مسترد کرسکے گا۔ٹک ٹاک کی جانب سے سائبر بلینگ ریسرچ سینٹر سے شراکت داری کا اعلان بھی کیا گیا ہے تاکہ آن لائن توہین آمیز مواد کی روک تھام کے لیے مزید کام کیا جاسکے۔

ایک بات یاد رکھیے گا مارشل صاحب!!! بھٹو جس حال میں بھی ہو بھٹو ہوتاہے۔۔۔۔ ذولفقار علی بھٹو نے پی آئی اے کے سربراہ کو یہ بات کیوں کہی تھی ؟

لاہور (ویب ڈیسک) معاشرے کی اخلاقی تباہی میں بہت سے دوسرے عوامل کا دخل بھی ہے لیکن شریف برادران کی اس روش نے بھی زوال کو تیز تر کیا۔ اتنا تیز کہ معاملہ اب قابو سے باہر ہو چکا۔سول حکومت کیا،اسٹیبلشمنٹ بھی اب دیواروں سے سر ٹکراتی پھرتی ہے۔

نامور کالم نگار ہارون الرشید اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ 22ماہ کے عرصے میں پنجاب میں تین آئی جی آئے اور چلے گئے۔ سوچ سمجھ کر تین بہترین چیف سیکرٹری چنے گئے اور رخصت ہوئے۔ بڑھتے بڑھتے بگاڑ وہاں آپہنچا ہے کہ ایک بڑی سرجری کے سوا کوئی صورت دکھائی نہیں دیتی۔۔۔ اور اس درجے کا سرجن کوئی نظر نہیں آتا۔ بے بسی سی بے بسی ہے اور مجبوری سی مجبوری ہے۔ بائیس کروڑ کی ایک قوم تاریخ کے چوراہے پہ لاچار کھڑی ہے اور نہیں جانتی کہ آنے والا کل اس کے لیے کیا لائے گا۔ شاعر نے کہا تھا: یہ جامہ صد چاک بدل لینے میں کیا تھا مہلت ہی نہ دی فیض کبھی بخیہ گری نے اور پچھلی صدی کے ایک قادر الکلام کا کہنا یہ ہے مصحفی ہم تو یہ سمجھے تھے کہ ہوگا کوئی زخم تیرے دل میں تو بہت کام رفو کا نکلا کچھ چھوٹے چھوٹے پیوند افسر شاہی میں ہم نے لگائے مگر پیوند ہی۔کچھ اصلاح ہوئی تو کچھ خرابی بھی۔دس فیصد افسر اب فوج سے لیے جاتے ہیں۔ ذوالفقار علی بھٹو نے تاخیر سے شمولیت (Lateral Entry)کے ذریعے بہت سے نئے افسر شامل کیے تھے۔ لائق فائق بھی ان میں تھے لیکن ایسے بھی کہ سبحان اللہ۔ ایک واقعہ ان کے اٹارنی جنرل یحییٰ بختیار بیان کیا کرتے: بھٹو نے اپنے ایک بھانجے کو پی آئی اے میں بھرتی کرایا۔ وہ کہا کرتے: یہ بھی معلوم نہیں کہ اس نے میٹرک کا امتحان بھی پاس کیا تھا یا نہیں۔ ان کے بقول تھا بہت کائیاں اور چرب زبان چنانچہ سیلز پروموشن افسر بنا دیا گیا۔

ایک کارعنایت کر دی گئی، تواضع کے لیے ہر ماہ معقول رقم اور مرکزی دفتر میں نشست۔ اسی نوجوان جسے پیار سے ’’ٹکو‘‘ کہا جاتا، کا ایک اور رشتے دار سندھ کا وزیرِ اعلیٰ تھا، قہر مان ممتاز بھٹو، جو ایک بادشاہ کی طرح حکمرانی کرتے۔ دوسرو ں کا تو ذکر ہی کیا، جنہوں نے شائستہ اطوار اور وضع دار غلام مصطفی جتوئی کے گھر چھاپہ مارا او رانہیں رسوا کرنے کی کوشش کی تھی۔ اس لڑکے کا اصل نام محفوظ مصطفی تھا۔ اس کے بقول یہ اس کی زندگی کا بہترین وقت تھا۔ بار بار افسروں کی طرف سے ٹوکنے اور سمجھانے کے باوجود،اس کان سے سن کر اس کان سے نکال دیتا۔ زچ ہو کر ان افسروں نے پی آئی اے کے اساطیری چئیرمین نور خان سے بات کی۔ اپنی دیانت، خلوص اور ریاضت کیشی کی وجہ سے جو ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے۔ ’’ٹکو‘‘ کو انہوں نے بلایا اور کہا کہ آج سے اپنا کام احساسِ ذمہ داری کے ساتھ انجام دو ورنہ گھر جاؤ۔ اسی اثنا میں جنابِ بھٹو لاڑکانہ کے دورے پر گئے۔ نور خان کو انہوں نے طلب کیا۔ پیغام میں کہا گیا تھا کہ پی آئی اے کے بارے میں وہ ایک بریفنگ چاہتے ہیں۔ بریفنگ مکمل ہو چکی تو وزیرِ اعظم نے کہا ’’یہ بات ہمیشہ یاد رکھیے گا ائیر مارشل صاحب!بھٹو بہرحال بھٹو ہوتاہے۔ نور خاں نے فخرِ ایشیا، قائدِ عوام ذوالفقار علی بھٹو کو تعجب سے دیکھا اور واپس چلے گئے۔ کراچی پہنچتے ہی اپنا استعفیٰ انہوں نے وزیرِ اعظم کو بھجوا دیا۔پی آئی اے سمیت ملک بھر کے تمام ادارے کس طرح تباہ ہوئے، یہ کوئی راز نہیں۔ راز کی بات یہ ہے کہ اپنی حماقتوں پہ غور کرنے اور خود کو بدلنے کاارادہ ہم ہرگز نہیں رکھتے

چین ایک بار پھر بازی لے گیا،کورونا وائرس پاسپورٹ جاری کر دیا باقی دنیا کے ساتھ ساتھ پاکستان کی پریشانی میں بھی اضافہ ہو گیا

بیجنگ : آخر کب تک ہم چپ سادھے رہیں گے،ایک بات تو خیر یہ بھی طے ہے کہ اگر ہم دنیا کے ساتھ نہیں چلیں گے تو پھر پیچھے رہ جائیں گے۔کورونا وائرس نے دنیا کا نقشہ بدل دیا ہے،اب جیو اکنامک کی بات دنیا میں کھل کر ہونے لگی۔تاہم دلچسپ بات یہ ہے کہ آمدہ دنوں میں کورونا وائرس کارڈ کے بغیر لندن میں نہیں جا سکیں گے اور نہ ہی کسی اور ملک کا راستہ آپ کے لیے میسر آ سکے گا۔ چین نے کورونا وبا کے دوران اپنے شہریوں کی فضائی آمد و رفت کے لیے ”وائرس پاسپورٹ“ متعارف کرادیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق عالمی وبا کورونا کے دوران سفری مشکلات کو حل کرنے کے لیے چین نے اپنی شہریوں کے لیے ”وائرس پاسپورٹ“ کے اجراء کا اعلان کیا ہے۔یہ پاسپورٹ ہیلتھ سرٹیفکیٹ کے طرز پر تیار کیا گیا ہے جس میں مسافر کے کورونا ٹیسٹ، ویکسی نیشن اور ضروری طبی معلومات درج ہیں جب کہ پاسپورٹ ہونے کی وجہ سے اس میں سفری تفصیلات بھی موجود ہوں گی۔ چین میں بیرون ملک سے داخل ہونے یا باہر جانے کے لیے وائرس پاسپورٹ دکھانا ہوگا تاہم ابھی یہ لازمی نہیں اور صرف چینی شہریوں پر لاگو ہوگا البتہ جلد اس سسٹم کو لازمی اور غیر ملکی مسافروں پر بھی لاگو کیا جائے گا۔چین کے وزارت خارجہ کے ترجمان نے بتایا کہ وائرس پاسپورٹ عالمی معاشی بحالی کو فروغ دینے اور سرحد پار سفر کو آسان بنانے کے لئے تیار کیا جارہا ہے۔ یہ دنیا کا پہلا وائرس پاسپورٹ ہوگا۔دنیا بھر میں وائرس پاسپورٹ جیسی دستاویز پر غور کیا جا رہا ہے امریکا اور برطانیہ اسی طرح کے اجازت نامے پر عمل درآمد کے لیے غور کر رہے ہیں جب کہ یورپی یونین ویکسین“گرین پاس”پر بھی کام کر رہی ہے جس سے شہریوں کو رکن ممالک اور بیرون ملک سفر کرنے کا موقع ملے گا۔

عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ بیوروکریٹ سلطانی گواہ بننےکیلئے تیار، وزیراعظم کو بڑی سازش سے بروقت آگاہ کر دیا گیا

لاہور (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ بیوروکریٹ سلطانی گواہ بننے کیلئے تیارہوگیا، اگر اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوئی اور حکومت نے پانچ سال پورے نہ کیے تو ایک بیوروکریٹ عمران خان کیخلاف سلطانی گواہ بن جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے اپنے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ عمران خان کی حکومت پانچ سال پورے کرے تو اچھی بات ہے لیکن اگر اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوئی اور حکومت پانچ سال پورے نہ کرسکی۔

ایسے میں وزیراعظم عمران خان کیخلاف وزیراعظم ہاؤس کا اعلیٰ ترین بیوروکریٹ سلطانی گواہ بن جائے گا۔ عمران خان کو اس بیوروکریٹ کا پتا بھی ہے۔مزید بتایا کہ مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہبازکو پنجاب کے اعلیٰ سرکاری افسران نے تین اہم کاموں میں کرپشن کی فائلیں پہنچائی ہیں، فائلوں میں موجودہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی غیرقانونی طور پر ہونے والے کاموں اورکرپشن کی دستاویز ہیں۔

بیوروکریسی اقتدار کا رخ تبدیل ہوتے دیکھ رہی ہے۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں انتظامی طور بڑی تبدیلیوں کا عندیہ دے دیا ہے، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب کے درمیان ملاقات بھی ہوئی جس میں پنجاب میں وزراء اور انتظامی افسران کی کارکردگی پر بات چیت کی گئی۔ اجلاس میں وزیراعظم نے پنجاب میں انتظامی طور بڑی تبدیلیوں کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں اہم پوسٹوں پر انتظامی تبدیلیاں کارکردگی کی بنیاد پر کی جائیں گی، تبدیلیوں کا مقصد گڈگورننس کو بہتر بنانا ہے۔

اسی طرح ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے عثمان بزدار کو ڈٹ کر کام کرنے کی ہدایت کی ہے، جس کے ساتھ سے ظاہر ہوگیا ہے کہ عمران خان کا وزیراعلیٰ پنجاب عثمان کو تبدیل کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب کو اسلام آباد میں ملاقات ہوئی جس میں پنجاب کے سیاسی و انتظامی اور عوامی مسائل سے متعلق امور زیر بحث آئیں گے۔ ملاقات میں 18مارچ کو ڈسکہ میں ضمنی الیکشن پر بھی پی ٹی آئی کی تیاریوں کا جائزہ لیا گیا، وزیراعظم نے الیکشن میں کامیابی کیلئے بہترین حکمت عملی بنانے کی ہدایت کی۔

چوری کی گاڑیاں منتقل کرنے والا ایڈووکیٹ،ملزم نے جیل میں قید کے دوران وکالت کا امتحان پاس کیا، تہلکہ خیز انکشاف

کراچی(این این آئی)اینٹی وہیکل لفٹنگ سیل نے کاریں چوری کرنے والے وکیل کو گرفتار کرلیا، ملزم ایوب ملک آٹھ مرتبہ پہلے بھی گرفتار ہوچکا ہے،ملزم نے جیل میں قید کے دوران وکالت کا امتحان پاس کیا اور اب وکیل کے بھیس میں چھینی اور چوری کی گئی گاڑیاں کراچی سے اندرون سندھ اور بلوچستان لے جاتا تھا۔کراچی پولیس کے سی آئی اے کے شعبہ اینٹی وہیکل لفٹنگ سیل کے

ایس ایس پی عارف اسلم راؤ کے مطابق اے وی ایل سی گلشن ڈویژن نے کارروائی کے دوران ملزم ایوب ملک موہانا ولد ابراہیم کو گرفتار کرکے عزیز بھٹی تھانے کی حدود سے چوری کی گئی کار نمبر اے کے ٹی 044 برآمد کرلی ہے۔پولیس کے مطابق ملزم سال 2009 سے کراچی میں کاروں کی چوری میں ملوث ہے اور اس سے قبل 8 مرتبہ اینٹی وہیکل لفٹنگ سیل پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہوچکا ہے۔ ترجمان اے بی ایل سی کے مطابق جیل میں قید کے دوران ملزم نے ایل ایل بی پاس کیا، ملزم وکیل کو یونیفارم میں چوری شدہ گاڑی لے جاتے ہوئے نویں بار گرفتار کر کے چوری شدہ کرولا کار برآمد کرلی ہے۔وکیل کی یونیفارم وارداتوں کے لیے استعمال کرنے کے بارے میں ملزم نے بتایاکہ وکیل کی یونیفارم پہن کر گاڑی لے جا تے ہوئے ٹول ٹیکس ادا کرنے کے لیے رکنا پڑتا ہے اور نہ ہی چیکنگ کے دوران پولیس روکتی ہے۔ ملزم کے بیان کے مطابق وکالت کے دوران بھی خرچے پورے کر نے کے لیے گاڑیوں کی چوری کا کام کرتا رہا۔ پولیس کے مطابق ملزم کسی بھی مخصوص چابی سے کوئی بھی گاڑی کھولنے کا ماہر ہے، ملزم عادی جرائم پیشہ ہے جو کہ چوری کی کاریں جھٹ پٹ بلوچستان میں حاجی نام کے خریدار کو فروخت کرتا ہے۔ ملزم کراچی پولیس کو متعدد وارداتوں میں انتہائی مطلوب تھا، ایس ایس پی عارف اسلم راؤ کے مطابق گرفتار ملزم اپنے جرائم سے وکالت کے پیشے کو بدنام کررہا تھا، ملزم سے مزید تفتیش کی جارہی ہے۔

پنشن کی سہولت ختم، ملازمین پر بجلیاں گرادینےوالی خبر ۔۔۔

پشاور( نیوز ڈیسک )خیبرپختونخواہ حکومت نے نئے بھرتی ہونے والے ملازمین کو پنشن کاحق نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق خیبر پختون خواہ کی جامعات کے نئے ملازمین کے لیے پنشن کی سہولت ختم کر دی گئی ہے، محکمہ ہائیر ایجوکیشن کے پی نے تمام جامعات کو ہدایت نامہ ارسال کر دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نئے بھرتی ہونے والے ملازمین کے لیے اب پیشن کی سہولت نہیں ہوگی۔ محکمہ ہائیر ایجوکیشن کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جامعات نئی بھرتیاں سرکاری کے

بجائے اپنے پے اسکیل کے مطابق کریں، جبکہ مالی خسارے پر قابو پانے کے لیے زیرِ نگرانی انتظام اسکولوں کی فیس بھی بڑھائی جائے۔ساتھ ہی محکمہ کی جانب سے فراہم کردہ جگہوں پر رہائش پزیر ملازمین سے بھی مرمت، سیکیورٹی اور دیگر اخراجات وصول کرنے کا حکم دیا گیا ہے اعلامیے میں یہ بھی کہا گہا ہے کہ موجودہ میڈیکل اور ہاؤس الاؤنس تبدیل کرکے صوبائی حکومت کی شرح پر لایا جائے۔ خیال رہے کہ گورنر خیبر پختون خواہ شاہ فرمان نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ صوبے کی جامعات کا معیارِ تعلیم بہتر بنانے کے لیے سرگرم ہیں، انہوں نے واضح کیا تھا کہ مختلف امور پر کام بھی کیا جا رہا ہے بجائے اپنے پے اسکیل کے مطابق کریں، جبکہ مالی خسارے پر قابو پانے کے لیے زیرِ نگرانی انتظام اسکولوں کی فیس بھی بڑھائی جائے۔ساتھ ہی محکمہ کی جانب سے فراہم کردہ جگہوں پر رہائش پزیر ملازمین سے بھی مرمت، سیکیورٹی اور دیگر اخراجات وصول کرنے کا حکم دیا گیا ہے اعلامیے میں یہ بھی کہا گہا ہے کہ موجودہ میڈیکل اور ہاؤس الاؤنس تبدیل کرکے صوبائی حکومت کی شرح پر لایا جائے۔ خیال رہے کہ گورنر خیبر پختون خواہ شاہ فرمان نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ صوبے کی جامعات کا معیارِ تعلیم بہتر بنانے کے لیے سرگرم ہیں، انہوں نے واضح کیا تھا کہ مختلف امور پر کام بھی کیا جا رہا ہے خیال رہے کہ گورنر خیبر پختون خواہ شاہ فرمان نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ صوبے کی جامعات کا معیارِ تعلیم بہتر بنانے کے لیے سرگرم ہیں، انہوں نے واضح کیا تھا کہ مختلف امور پر کام بھی کیا جا رہا ہے